134

صحافیوں کے لئےجرنلسٹس پروٹیکشن ایکٹ کی منظوری

وفاقی حکومت کا صحافیوں کے لئے اہم اقدام
وفاقی کابینہ کا صحافیوں اور میڈیا پروفیشنل کے تحفظ کے لیے جرنلسٹس پروٹیکشن ایکٹ کی منظوری
وفاقی کابینہ نے پروٹیکشن آف جرنلسٹس اینڈ میڈیا پروفیشنلز ایکٹ 2019 کی منظوری دے دی
میڈیامالک ہرصحافی کی زندگی اورصحت کی انشورنس فراہم کرنےکےذمے دار ہوں گے،بل
صحافیوں کےتحفظ کےایکٹ کا اطلاق مسلح تصادم،داخلی تصادم اوردورامن میں بھی ہوگا،بل
کمیشن کوئی بھی معاملہ متعلقہ مجسٹریٹ کو پیش کرنےکامجازہوگا،بل2020
صحافیوں کےتحفظ کیلئے کمیشن کوسول کورٹ کےبرابراختیارات حاصل ہوں گے، بل
کمیشن دستاویزات طلب کرسکےگا،بیان حلفی پر شہادتیں وصول کرسکے گا، بل
کمیشن گواہان کوطلب کرنےاوران سےحلف پر بیان لینے کا مجاز ہوگا، بل
کمیشن وفاقی اورصوبائی حکومتوں،انٹیلی جنس ایجنسیوں اورکسی بھی ادارے سےمعلومات لے سکےگا،بل
کمیشن میں برابرووٹ ہونےپرچیئرمین کا ووٹ کاسٹنگ ہوگا، بل 2020
کمیشن میں رکن نیشنل پریس کلب کانامزدکردہ ہوگا، بل2020
پی ایف یوجےکےنامزد 4ممبران میں ہرصوبے سےایک ایک ہوگا،بل
کمیشن کے4ارکان پی ایف یو جےکےنامزد کردہ ہوں گے،بل
صحافیوں کےتحفظ کےلیےکمیشن کاچیئرپرسن سپریم کورٹ کا سابق جج ہوگا، بل
وفاقی حکومت صحافیوں کےتحفظ کے لیے 7رکنی کمیشن قائم کرے گی، بل
صحافیوں کودھمکی دینے،تشددکرنےکااقدام فوری،موثرتفتیش اورپراسیکیوشن سےمستثنانہیں ہوگا،بل
جرنلسٹس ویلفیئراسکیم کےتحت ہرمیڈیامالک ایک جامع تحریری تحفظ پرمبنی پالیسی دینےکاذمے دار ہوگا، بل
صحافیوں کی تربیت اوران کی انشورنس کیلئے جرنلٹس ویلفیئراسکیم شروع کی جائےگی، بل
حکومت صحافیوں کوہراساں کرنےکےخلاف ان کےتحفظ کویقینی بنائےگی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں