171

پاکستان میں صحافت بھوک اور کورونا سے مرنے لگی

فیلڈ میں کام کرنے والے صحافی بھی کورونا وائرس کا شکار ہوگئے جبکہ ان کے لیے حکومت و صحافتی اداروں کی طرف سے کسی قسم کی سپورٹ بھی نا ملی پاکستان میں صحافت بھوک اور کورونا سے مرنے لگی جبکہ صحافتی اداروں کے مالکان اربوں پتی بن گئے حکومت اداروں کی بے حسی قائم ہے۔۔۔۔۔۔۔

پاکستان میں 3 صحافی کورونا وائرس کا شکار ہوئے ہیں 2 لاہور اور ایک حافظ آباد میں اور مزید کو بھی خطرہ ہے۔ بغیر تنخواہ مراعات اور سہولیات کے عرصہ دراز سے پاکستان میں اپنی صحافتی ذمہ داریاں ادا کر رہے ہیں مگر 70 سال سے زائد عرصہ سے فیلڈ کے صحافیوں کے لیے کوئی عملی اقدامات سامنے نا آسکے شعبہ صحافت میں کام کرنے والے بے روزگار صحافیوں کو ایک طرف معاشی مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے تو دوسری طرف سے اداروں اور حکومت کی طرف سے موجودہ صورتحال میں کسی قسم کی حفاظتی اقدامات کے لیے کسی قسم کی سپورٹ حاصل نا ہے حکومت کو چاہیے کہ وہ قانون سازی کرکے فیلڈ میں کام کرنے والے صحافیوں کے تحفظ کے لیے خصوصی اقدامات کریں ان کو تعلیم صحت اور معاشی مسائل کو حل کیا جائے اور موجودہ حالات میں ان کو سیفٹی کٹ فراہم کی جائیں اور ان کو مالی امداد بھی فراہم کی جائے تاکہ وہ اپنے فرائض کو احسن طریقے سے ادا کر سکیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں